دی آرٹ اینڈ سائنس آف فاسٹ بولنگ

کرکٹ کے خوب صورت کھیل میں فاسٹ بولنگ کا وجود اسے مزید حسین بنا دیتا ہے . اڑتی وکٹیں ،ہوا میں گھومتی گیندیں ،آنکھوں میں خوف پیدا کر دینے والی رفتار ،اور بلے باز کو اپنی وکٹ بچاتے ہوے دیکھنا ،ایک شاندار نظارہ ہوتا ہے .فاسٹ بولنگ کی باریکیاں ،اسے مزید پیچیدہ بنا دیتی ہیں .مگر اپنی اصل میں فاسٹ سوئنگ بولنگ ایک سادہ سا تصور ہے .کچھ اسکی سادگی کی پہچان کرتے ہیں .
رن اپ اینڈ ایکشن
کسی بھی فاسٹ بولر کے لئے عمدہ ،سمود ،رن اپ بولنگ کے ساتھ ساتھ اسکی فٹنس کے لئے بھی بے انتہا ضروری ہے .نہ تو شعیب اختر کی طرح چالیس ،پینتالیس میٹر کے فاصلے سے دوڑ کر گیند پھینکنا ہر کسی کے بس کی بات ہے اور نہ ہی وسیم اکرم کی طرح بارہ ،چودہ قدموں سے نا قابل یقین رفتار سے گیندیں کرانا کسی عام انسان کی استطاعت ہے .ہر بولر کو اپنے قد،وزن،اور آسانی کے اعتبار سے اپنے رن اپ کا مناسب فاصلہ خود ہی طے کرنا ہے .اگر آپ اپنے مکمل جسم کی طاقت کو استمعال کرنا چاہتے ہیں تو بہترین رن اپ کی بنیادی باتیں ذہن نشین کر لیں .آپ کو کریز تک مناسب رفتار سے بھاگ کر جانا چاہے نہ تو آپ بہت زیادہ تیز ہوں اور نہ ہی بہت زیادہ سلو .زیادہ تیز ہونے کی صورت میں آپ کا سر ساکت نہیں رہے گا ،یوں گیند کی لائن لینتھ پر آپکا بہت کم کنٹرول ہو گا .زیادہ سلو بھاگنے کی وجہ سے آپکے جسم ،خاص کر کندھے اور کمر پر بہت بوجھ پڑے گا اور رفتار بھی کم ہو سکتی ہے .اپنا رن اپ ہمیشہ ٹھیک ٹھیک ناپ لیں .آپکی کمر اور گردن سامنے کی جانب ہلکی سے جھکی ہونی چاہئے یعنی آپ اپنے ٹارگٹ یعنی سٹمپس کی جانب ہوں پیچھے یا سیدھے نہ ہوں .
کریز پر پہنچ کر گیند پھینکے کے عمل کو بولنگ ایکشن کہا جاتا ہے .عمدہ رن اپ کے بعد ایک بولر کے لئے بے انتہا ضروری ہے کہ وہ کریز پر عمدہ رفتار اور انرجی کے ساتھ پہنچے اور اسی رفتار کے ساتھ گیند پھینکے .کچھ بولر سائیڈ آن ہو کر گیند پھینکتے ہیں تو کچھ فرنٹ آن ہو کر تو کچھ بولر مکس ایکشن سے گیند پھینکتے ہیں .ہر انداز کے فوائد اور نقصانات ہیں مگر سائیڈ ان کلاسیکل اور سب سے بہتر انداز جانا جاتا ہے .لیکن بولنگ ایکشن ہر انسان کے جسم کے مطابق ہی ہوتا ہے یوں ہر بولر کو دیکھ کر ہی اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ اس پر کون سا ایکشن زیادہ سوٹ کرے گا .اگر آپ ان تینوں انداز کے بولنگ ایکشنز کو آسانی سے سمجھنا چاہتے ہیں تو بولنگ کریز پر اپنی ٹانگیں اور اپنا منہ بیسٹمین کی جانب کر کے بیٹھ جائیں .اب اپنا بولنگ ہاتھ بلند کریں اور گیند پھینکنے کے لئے بازو اوپر کر کے گیند پھینک دیں تو یہ فرنٹ آن بولنگ ایکشن ہوا.اب آپ بیٹھے بیٹھے اپنے کندھے کو اور اوپر جسم کو دائیں طرف موڑیں (اگر آپ رائٹ ارم بولر ہیں تو ) اور آپکا نچلا دھڑ اسی پوزیشن پر رہے تو اب آپ مکس ایکشن سے گیند کر رہے ہیں .اب آپ اپنی ٹانگیں نان سٹرائکر بیسٹمین کی جانب کر لیں اور آپکا سینہ امپائر کی طرف ، چہرہ اور کندھے کیپر یا سٹرایکنگ بیسٹمین کی جانب ہوں تو اب آپ سائیڈ آن ایکشن سے گیند کرا رہے ہیں .سیدھی لائن میں بھاگنا ،سیدھا ایکشن اور سیدھا فالو تھروو نہایت اہمیت کا حامل ہے . اسکے بغیر عمدہ لائن لینتھ بہت مشکل ہے .
آوٹ سوئنگ

اب آتے ہیں بولنگ کے ہنر یعنی سوئنگ اور سیم کی جانب ،گیند سوئنگ نہ ہو تو بولر بے دانت کا شیر بن جاتا ہے چاہئے اسکی کتنی بھی رفتار کیوں نہ ہو . رائٹ ہینڈڈ بیٹسمین کے لئے دائیں ہاتھ کے بولر کی آوٹ سوئنگ اور لیفٹ آرم بولر کے لئے ان سوئنگ کلیدی ترین گیندیں ہیں .ہاتھ اور اینگل کے فرق کے علاوہ دونوں کا ایک ہی اصول ہے . دائیں ہاتھ کے بولر کو نئی گیند سے آوٹ سوئنگ کرنے کے لئے ،جس جانب گیند کے میکر کا نام لکھا ہے اسکو اندر کی جانب یعنی جس طرف سوئنگ کرانے ہو اسکی الٹ طرف رکھیں .اپنی دونوں انگلیوں کو سیم پر رکھیں ،کچھ بولر اپنی انگلیوں میں زیادہ فاصلہ رکھتے ہیں تو کچھ کم ،آپ بھی اپنی انگلیوں کے سائز کے مطابق جہاں اطمنان اور آسانی محسوس کریں اتنا فاصلہ رکھیں .اب سیم کا رخ جہاں پر فرسٹ سلپ ہوتی ہے اس جانب کر دیں یا تھوڑا سا بائیں جانب کر دیں .اپنا انگوٹھا سیم کی نچلی جانب ، سیم ہی پر رکھیں عرفان پٹھان کی طرح سیم سے اکراس نہ رکھیں اس سے رفتار اور سوئنگ دونوں پر منفی فرق پڑے گا .اپنی دونوں انگلیوں کو پورے کا پورا گیند پر نہ رکھیں بلکہ انکی جڑ گیند سے علیحدہ ہو اس طرح گیند کی ریلیز عمدہ ہو گی .آخر میں اپنی کلائی کو “کاک” کر لیں یعنی ہاتھ کو پیچھے کر کے ایک جگہ پر کھڑا کر دیں اور پھر ہلکا سا فرسٹ سلپ کی جانب ہاتھ کا رخ کرتے ہوے گیند پھینک دیں .مسلسل پریکٹس سے آپ با آسانی آوٹ سوئنگ میں مہارت حاصل کر لیں گے .لیفٹ آرم بولر کا فرق یہ ہو گا کہ وہ چونکہ رائٹ ہینڈ بلے باز کو ان سوئنگ کرانا چا رہا ہے تو اسکی سیم کا رخ فائن لیگ کی جانب ہو گا اور وہ آخری لمحے میں گیند کو اندر کی جانب رخ کر کے پھینکے گا .زیادہ ہائی آرم ایکشن سے آوٹ سوئنگ نہیں ہو گی یا بہت کم ہو گی .اینڈرسن اور سٹین کی آوٹ سوئنگ کا راز انکے عمدہ ایکشن میں ہیں .اگر جانسن کی طرح آرم لو ہو گا تو بھی سوئنگ کرنے میں مشکل ہی پیش اے گی .سٹین ،اینڈرسن اور وسیم کے بولنگ آرم کو کاپی کر لیں سوئنگ کے لئے بہترین اینگل ہے .
ان سوئنگ
آوٹ سوئنگ کے پورے پراسس کو الٹ کر دیں تو آپ ان سوئنگ کرا لیں گے . بال میکر والی سائیڈ اب باھر کی جانب ہو گی .کلائی “کاک” ہونی چاہئے ،ہاتھ گیند کے پیچھے ہونا چاہئے اور اس میں ہاتھ تھوڑا زیادہ ہائی آرم ہونا چاہئے .سیم کا رخ فائن لیگ کی جانب ہونا چاہئے ،اور دونوں انگلیاں سیم کے سائیڈ پر ہونے کے بجائے آپکی بڑی انگلی سیم پر ہو گی اور شہادت والی انگلی سیم کی سائیڈ پر ہو گی .اگر آپ لیفٹ آرم بولر ہیں تو آپکو یہ آوٹ سوئنگ کرنی ہو گی .آپ سیم کا رخ دوسری سلپ کی جانب رکھیں گے .شین بانڈ ان سوئنگ کے چیمپئن بولر تھے .
لیگ کٹر

کسی بھی اچھے سیم بولر کے لئے لیگ کٹر سب سے اہم ہتھیار ہے .میک گرا اور ایمبروز لیگ کٹر کرانے مہارت رکھتے تھے .اپنے لمبے قد کی وجہ ان دونوں لپ اچھال بھی زیادہ حاصل ہوتا تھا جسکی وجہ سے یہ بیٹسمین کو سلپ میں زیادہ آوٹ کروانے میں کامیاب رہتے تھے .لیگ کٹر میں گیند ہوا میں سوئنگ نہیں ہوتی بلکہ ٹھپہ پڑنے کے بعد دائیں ہاتھ کے بیسٹمین کی باہر کی جانب نکل جاتی ہے .لیگ کٹر میں بڑی درمیان والی انگلی سیم پر اور دوسری شہادت والی انگلی سیم کے بجائے گیند پر ہوتی ہے .کچھ بولر دونوں انگلیوں کو ساتھ جوڑ کر بھی لیگ کٹر کرتے رہے .ہوتا یہ ہے کہ لیگ کٹر میں اپنی انگلیوں کو بائیں جانب تیزی سے رول کیا جاتا ہے اس سے گیند پر جو “بیک سپین “پیدا ہوتی ہے اس سے گیند پچ پر لگنے کے بعد آف سٹمپ کی باہر کی جانب نکلتی ہے .سمجھیں یہ ہوا میں نہ سوئنگ ہونی والی آوٹ سوئنگ بال ہے .اگر موسم سوئنگ کے سازگار نہیں ہیں تو لیگ کٹر ایک موثر ہتھیار ہے .
آف کٹر
یہ گیند آف سٹمپ پر پڑ کر دائیں ہاتھ کے بلے باز کے پیڈز کی جانب ،اندر آئے گی اور لیفٹ ہینڈڈ بلے باز سے باہر کی جانب نکلے گی .ایک بار پھر کہوں گا کہ لیگ کٹر کے عمل کو الٹا کر دیں تو آپ آف کٹر کرا لیں گے .آف کٹر کی بار آپکی شہادت والی انگلی سیم پر اور درمیان والی بڑی انگلی سیم سے نیچے گیند پر ہو گی .آپ انگلیوں کے درمیان فاصلے کو کم بھی کر سکتے ہیں .بنیادی بات یہ ہے کہ آپ مطلوبہ نتائج حاصل کر رہے ہیں یا نہیں ؟؟تکنیک میں تھوڑی بہت تبدیلی سے کوئی خاص فرق نہیں پڑتا .آف کٹر میں گیند کو تیزی سے دائیں جانب رول کیا جاتا ہے .ایل بی ڈبلیو اور بولڈ کے لئے یہ شاندار گیند ہے .والش ،اینٹنی وغیرہ عمدہ آف کٹر کرتے تھے .میک گرا بھی اچھا آف کٹر پھینکتے تھے .
ریورس سوئنگ

ریورس سوئنگ نے پرانی گیند سے بولنگ کو بدل کر رکھ دیا ہے .نارمل سوئنگ اور ریورس سوئنگ میں چند بنیادی فرق ہیں جو سمجھنا ضروری ہیں .نارمل سوئنگ میں گیند شائن کی الٹی جانب سوئنگ کرے گی جبکہ ریورس سوئنگ میں جس جانب شائن ہو گی گیند اسی جانب گھومے گی .اگر نئی گیند سے کوئی بولر صرف ایک طرز کی سوئنگ کرا رہا ہے تو ریورس سوئنگ میں وہ یکایک دونوں طرز کی سوئنگ بھی کرا لے گا . سب سے حیران کن بات کہ پچاسی میل کی اوسط رفتار سے کم رفتار پر ریورس سوئنگ بہت ہی کم ہو گی یا ہو گی ہی نہیں جبکہ نئی گیند سے نارمل سوئنگ میں گیند اگر ستر سے پچھتر میل کی رفتار سے ہو گی تو وہ زیادہ سوئنگ کرے گی یعنی رفتار بڑھنے پر سوئنگ کم ہو گی .اسکے برعکس ریورس سوئنگ میں سپیڈ بڑھنے پر ریورس سوئنگ میں کوئی کمی نہیں اے گی بلکہ بڑھ جائے گی .جو ایک مشترک بات ہے کہ اگر دونوں سوئنگ میں بولر کا ریلیز بہترین ہو گا تو گیند لیٹ سوئنگ کرے گی . یہ باتیں ناسا کے تجربات سے ثابت ہو چکی ہیں .گوگل؛ پر سرچ کرنے سے مطلوبہ معلومات مل جائیں گی .ان سوئنگ ریورس سوئنگ کے لئے بنیادی ان سوئنگ کے الٹ گیند کو جس جانب سوئنگ کروانا ہے اسی جانب شائن رکھ کر سیم کا رخ بھی اسی جانب کر کے گیند پھنک دیں .اگر آوٹ سوئنگ کرانی ہے تو شائن باہر رکھ کر آوٹ سوئنگ کی سیم پوزیشن پر گیند پھینک دیں .

blog images 10blog images 13

کنٹراسٹ سوئنگ  blog images 12


بہت سے لوگوں کے لئے کنٹراسٹ سوئنگ ایک نئی ٹرم ہو گی .ایک انڈیا کے سائنسدان رابندرا مہتا نے جو ناسا میں سوئنگ بولنگ پر تجربات کرتے رہے یہ انکی اایجاد کردہ ٹرم ہے .انکے بقول نارمل ریورس سوئنگ اور کنٹراسٹ سوئنگ میں فرق یہ ہے کہ کنٹراسٹ سوئنگ میں سیدھی سیم رکھ کر گیند پھینکی جاتی ہے جبکہ ریورس سوئنگ میں سیم کا رخ جس جانب سوئنگ کرنی ہو اس اسی جانب رکھا جاتا ہے .اس سے جو اہم فرق پیدا ہوتا ہے وہ یہ ہے کہ کنٹراسٹ سوئنگ میں جب تک گیند بہترین تیار شدہ حالت میں نہیں ہو گی وہ سوئنگ نہیں کرے گی .اور آجکل کی کرکٹ میں ایسی بہترین حالت میں گیند بنا لینا نا ممکن حد مشکل ہے .کنٹراسٹ سوئنگ کی مثال یہ لیں کہ ایک ٹینس بال پر ایک جانب ٹیپ چڑھا دیں اور دوسری جانب خالی رکھیں تو وہ گیند جس جانب ٹیپ ہو گی اسی جانب سوئنگ کرے گی .
سلو بال ویریشنز

محدود اورز کی کرکٹ میں عمدہ سلو بالز بہت ضروری ہیں .ایک انداز کی سلو بال تو آف کٹر ہے جس میں آف سپنر کے انداز میں ایک انگلی سے گیند کو سپین کرا کر پھینکا جاتا ہے .لیگ کٹر کو سلو پھینکا جائے تو وہ لیگ کٹر سلو بال بن جائے گی .سب سے مشکل اور سب سے عمدہ سلو بال بیک آف دی ہینڈ سلو بال ہے . یہ گیند سٹیو واہ کی متعارف کردہ سمجھی جاتی ہے .اس میں گیند پھینکتے وقت ہاتھ کی پشت بیسٹمین کی جانب ہوتی ہے اور گیند پر الٹی روٹیشن ہوتی ہے جسکی وجہ سے گیند باؤنس پیدا کرتی ہے .”نکل” بال ایک اور شاندار سلو بال ہے .اس میں گیند کی ریلز سے کچھ در قبل سیم پر موجود انگلیاں پیچھے کر کے ان انگلیوں کا پچھلا حصہ گیند پر رکھ لیا جاتا ہے یوں گیند پر کسی قسم کی کوئی طاقت نہیں لگ پاتی اور گیند سلو جاتی ہے .”سپلٹ فنگر” سلو بال فرنانڈو اور میک گرا کی پسندیدہ سلو گیندوں میں سے تھی .اس گیند میں گیند کی ریلیز سے پہلے دونوں انگلیوں کو پھیلا کر ان میں فاصلہ پیدا کر لیا جاتا ہے اور یوں اس صورت میں گیند پر کوئی فورس نہیں لگ سکتی اور گیند کی سپیڈ کم ہو جاتی ہے .
موجودہ بولرز میں اینڈرسن آوٹ سوئنگ اور ان سوئنگ کے ماہر ہیں .سٹین آوٹ سوئنگ اور ریورس سوئنگ کے ماہر ہیں .براڈ لیگ اور آف کٹر کے ماہر ہیں .جانسن ،باؤنسر ،آف دی پچ سپیڈ اور آف اور لیگ دونوں کٹر کے عمدہ بولر ہیں .عرفان آوٹ سوئنگ اچھی کرا لیتے ہیں .فالکنر بیک آف دی ہینڈ سلو بال اچھی کرا لیتے ہیں براوو کا سلو آف کٹر اچھا ہے .ملنگا اچھی ریورس سوئنگ کرا لیتے ہیں .مورکل اور فیلنڈر شاندار لیگ کٹر کرتے ہیں .بولٹ شندار ان سوئنگ کراتے ہیں

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s