کتاب : طبقات ابن سعد اخبار النبی .رسول پاک کا حلیہ مبارک

ایک انصاری سے مروی ہے کہ انہوں نے حضرت علی رضی الله تعالی سے جو مسجد کوفہ میں اپنی تلوار کے پر تلے کو کمر میں لٹکائے ہوے تھے .رسول الله صلی الله علیہ وسلم کی صفت و کیفیت دریافت کی تو انہوں نے کہا کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم سرخی مائل خوب گورے رنگ کے تھے .آپ کی آنکھیں نہایت خوبصورت سیاہ تھیں .بال سیدھے (یعنی بغیر گھونکر کے ) تھے .ریش مبارک خوب گھنی تھی .رخسار بھرا ہوا نہ تھا .بال کانوں تک تھے (یعنی پٹے تھے )سینہ شکم کے بال باریک تھے .گردن چاندی کا لوٹا معلوم ہوتی تھی .
سینے سے ناف تک شاخ کی طرح بال تھے .سینہ شکم میں اسکے سوا کوئی بال نہ تھا .ہتھیلی بھری ہوئی تھی .جب چلتے تو اس انداز سے کہ گویا انحداد فرما رہے ہیں اور ایسا محسوس ہوتا تھا کہ گویا پتھر کی چٹان سے اتر رہے ہیں .جب مڑتے تھے تو پورے مڑتے تھے (یعنی صرف گردن پھیر کر نہیں دیکھتے تھے )آپ کے چہرے کا پسینہ موتی معلوم ہوتا تھا .پسینے کی خوشبو تیز خوشبو والے مشک سے بھی زیادہ پاکیزہ تھی .نہ پست قامت تھے نہ بلند بالا ،نہ کسی کام میں عاجز تھے نہ بد خلق (خلاصہ یہ ہے کہ ) میں نے آپ کا مثل نہ آپ سے پہلے دیکھا اور نہ آپ کے بعد صلی الله علیہ وسلم
علی بن ابی طالب کرم الله وجہہ سے مروی ہے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم بڑے سر،بڑی آنکھ ،لمبی پلک،آنکھ میں بڑی سرخی ،گھنی ڈاڑھی ،چمکتے رنگ والے تھے .جب آپ چلتے تھے تو اس طرح جھک جاتے تھے کہ گویا کسی بلندی پر چل رہے ہیں ،اور جب مڑتے تو پورے مڑتے تھے ،آپ کی ہتھلیاں اور قدم پر گوشت تھے .
انس بن مالک سے مروی ہے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم سب لوگوں سے بلند تھے ،نہ تو آپ بہت دراز قد تھے نہ پست قامت ،نہ ایسے گورے جو با لکل سفید ہوں اور نہ ہی سیاہی مائل گندمی ،بلکہ سرخی مائل تھے ،نہ آپ کے بال گھونگر والے تھے اور نہ با لکل سیدھے .
انس سے مروی ہے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم کے قدم پر گوشت تھے آپ کو پسینہ بہت آتا تھا .میں نے آپ کے بعد آپ کا مثل نہیں دیکھا .
ابی ہریرہ سے مروی ہے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم کی باہیں لمبی تھیں .دونوں شانوں کے درمیان بہت فاصلہ تھا .آپ پورے آگے پھرتے اور پھر پورے پیچھے کی طرف میرے ماں باپ آپ پر فدا ہوں ،آپ بد خلق نہ تھے نہ بد زبان اور نہ بازاروں میں بکواس کرنے والے .
ابی ہریرہ سے مروی ہے کہ میں نے کوئی چیز رسول الله صلی الله علیہ وسلم سے زیادہ حسین نہیں دیکھی .عارض منور گویا ایک درخشندہ آفتاب تھا .رسول الله صلی الله علیہ وسلم سے زیادہ تیز رفتار کسی کو نہیں دیکھا .گویا آپ کے لئے زمین لپیٹ دی جاتی تھی .
جابر بن سمرہ سے مروی ہے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم کا دہانہ بڑا تھا .اور ایڑی میں گوشت کم تھا .
براہ بن عازب سے مروی ہے کہ رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم بلند نظر آتے تھے .آپ کے شانوں کے درمیان فاصلہ بہت تھا ،بال کانوں کی لو تک پہنچ جاتے تھے اور بدن پر سرخ لباس تھا .
ابی اسحاق سے مروی ہے کہ ایک شخص نے براہ سے پوچھا کہ کیا رسول الله صلی الله علیہ وسلم کا چہرہ تلوار کی طرح لانبہ تھا ؟تو انہوں نے کہا نہیں چاند کی مانند گول تھا .

(جاری ہے )

Advertisements

2 thoughts on “کتاب : طبقات ابن سعد اخبار النبی .رسول پاک کا حلیہ مبارک

  1. ماشاءاللہ بہت ہی مبارک اور محترم ہستی کے شمائل کا انتہائی عمدہ بیان

    صلی اللہ علیہ وسلم

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s