ممتاز مفتی کی لبیک : ،رکاوٹ ،حج اوربد معاشی

رکاوٹ نہ ہو تو حرکت ممکن نہیں ہو .کشش ثقل نہ ہو تو پودے نہ اگ سکیں .رکاوٹ اس بات کی دلیل ہے کہ ہماری حرکت مثبت ہے .رکاوٹ یہ ثابت کرتی ہے کہ ہمیں اہمیت دی جا رہی ہے .وہ دیکھو وہ قدرت نے ایک اونگھتے ہوئے زائر کی طرف اشارہ کیا ” وہ زائر عبادت کرتے کرتے سوگیا ہے .تخریبی طاقت مخل ہو تو ….”
“بات ٹوٹ جاتی ہے ” میں نے ان کی بات کاٹ کر کہا
“اونہوں ٹوٹتی نہیں ،بلکہ بات چل نکلنے کی خبر لاتی ہے .عبادت میں نیند تو سمجھو عبادت کاٹ رہی ہے ”
علی حیدر! ! ایک پہلوان نما پنجابی نے ہمارے قریب آ کر دونوں بازو اٹھا کر نعرہ لگایا .” بھاجی سنگ اسود کو چوم کر آئے ہیں ” وہ بولا سنگ اسود کو چومے بغیر بھلا آ سکتے تھے ہم ”
“لیکن وہاں تو بڑی بھیڑ ہے ” میر صاحب بولے
“ہم کیا پرواہ کرتے ہیں بھیڑ کی ” پنجابی نے فخریہ لہجے میں کہا
“پر وہ تو رستہ روکے بیٹھے ہیں ” سرفراز نے کہا
“رستہ روکنے والے کی ایسی کی تیسی اس کے فلاں کے فلاں کا فلاں ” پہلوان نے بڑے خشوع و خضوع سے منہ پھاڑ کر صلوات سنائیں .پھر بولا “ساری عمر کثرت کی ہے ،بھاجی کوئی مخول ہے .ایک کو اٹھا کر ادھر پھینکا ،ایک کو موھڈا مار کر ادھر کیا ،پانچ دس کو پیچھے گھسیٹا .ایک کی گردن دبائی ،ایک کو ایڑھی ماری .بس راستہ صاف ہو گیا .پھر جی بھر کے سنگ اسود کو چوما .کسی کی مجال نہیں ہوئی کہ ہم کو ادھر سے ہٹائے .علی حیدر !!اس نے پھر نعرہ لگایا .وہ خوشی سے پھولا نہیں سما رہا تھا جیسے سنگ اسود کو بوسہ دے کر نہیں ،الله میاں کی گود میں بیٹھ کر آیا ہو

.

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s