جب ایوب خان کی نیند نے بھارت کو ممکنہ تباہی سے بچا لیا .قدرت الله شہاب کی کتاب”شہاب نامہ ” سے عماد بزدار کا سنسنی خیز اقتباس

سفارت کاری کے فن میں چینیوں کا اپنا ہی ایک خاص اور نرالا انداز ہے –
وہ اپنے دوستوں پر بھی اپنی رائے یا مشورہ یا نصیحت خواہ مخواہ یا برملا ٹھونسنے کے عادی نہیں –
لیکن اشاروں کنایوں میں اپنا عندیہ نہایت خوش اسلوبی سے واشگاف طور پر ظاہر کر دینے میں انتہائی مہارت رکھتے ہیں –
میرا اندازہ ہے کہ رات کے ڈھائی بجے مجھے جگا کر غالباً وہ اپنے مخصوص انداز میں یہ پیغام پہنچا رہے تھے کہ جنگ کے یہی ابتدائی گھنٹے انتہائی اہم ہیں ،
ہندوستانی فوج کے پاؤں اکھڑ گئے ہیں ، اور چینیوں کے خوف سے سر پر پاؤں رکھ کر ہر محاذ سے بھاگ رہی ہے –
اگر پاکستان اس موقع سے کوئی فائدہ اٹھانا چاہتا ہے ، تو ہر گز وقت ضائع نہ کریں –
میں نے فوراً لباس تبدیل کیا اور اپنی کار نکال کر تیز رفتاری سےایوان صدر جا پہنچا –
اس وقت کوئی تین بجے کا عمل تھا –
کسی قدر تگ و دو کے بعد مجھے صدر ایوب کی خواب گاہ تک رسائی ہو گئی –
میں نے انہین چینی کےساتھ اپنی گفتگو تفصیلاً سنائی ، تو انہوں نے بے ساختہ کہا –
” یہ کوئی غیر متوقعہ خبر ہر گز نہیں – لیکن اتنی رات گئے تمھیں صرف یہ خبر سنانے کے لیے آنے سے اس کا اصلی مقصد کیا تھا ؟ ”
میں نے اپنا قیاس بیان کیا شاید اس کا مقصد یہ ہو کہ ہم ان لمحات کو اپنے مقصد کے لیے کسی فائدہ مندی کے لیے استعمال میں لے آئیں –
” مثلا ؟ ” صدر ایوب نے پوچھا
” مثلا ” میں نے اناڑیوں کی طرح تجویز پیش کی –
اسی لمحے اگر ہماری افواج کی نقل و حرکت بھی مقبوضہ کشمیر کی سرحدوں کے خاص خاص مقامات کی جانب شروع ہو جائے ، تو …………………..
صدر ایوب نے تند و تیز لہجے میں میری بات کاٹ کر کہا –
” تم سویلین لوگ فوجی نقل و حرکت کو بچوں کا کھیل سمجھتے ہو – جاؤ اب تم بھی جا کر آرام کرو – مجھے بھی نیند آ رہی ہے – ”
آج تک میرا یہی خیال ہے کہ اس رات صدر ایوب نے اپنی زندگی اور صدارت کا ایک اہم ترین سنہری موقع ہاتھ سے گنوا دیا –
اگر ان کی قائدانہ صلاحیتوں پر نیند کا غبارنہ چھایا ہوتا – اور ان کے کردار میں شیوہ دیوانگی اور شیوہ مردانگی کا کچھ امتزاج بھی موجزاں ہوتا ، تو غالباً اس روز ہماری تاریخ کا دھارا ایک نیا رخ اختیار کر سکتا تھا –
از قدرت الله شہاب ( شہاب نامہ

)

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s