کب تک مظلوموں کے ہاتھ ،کان اور ناک کٹیں گے ؟اب ظالموں کے اعضا کاٹنے ہوں گے .قاسم خان

شیخوپورہ میں ایک درندہ صفت زمیندار نےاپنے ملازم کے اس وجہ سے ہاتھ کاٹ دئیے کہ اس نے کام کرنےکی اجرت مانگی تھی.
کچھ دن پہلے اسی طرح کے ایک واقعہ میں ایک شخص نے ووٹ نہ دینے پر ایک کمزورآدمی کا کان کاٹ دیا تھا،اور اسی طرح کے واقعات آئے روز پیش آتے رہتے ہیں ،مگر مجال ھے کہ کوئی ایکشن لیا جاتا ھو، کبھی تو کسی صاحب اقتدار و اختیار کے کان پر جوں رینگنی چائیے ،
کیا یہ سب ھی جواب دہی کو بھول گئے ھیں ،اگر ایسا ھی ھے تو پھر انتظار کریں وہ وقت بھی آ جائے گا جب. ایک ایک زرہ کا حساب برابر ھو جائے گا ،لیکن وقت ھاتھ سے بہت دور نکل چکا ھو گا ،
مجھے یہ سمجھ نہیں آرہی کہ ایک انسان اس حد تک بھی جا سکتا ھے ،اتنا پست بھی ھو سکتا ھے ،
کہ وہ اپنی اس فرعونی خواہش کی گھناونی تکمیل کے لئیے کسی مجبور و بے بس
کے ہاتھ ھی کاٹ ڈالے،، یاحسرتاً علٰی العباد!!
اُسے یہ اختیار
آخر دیا کس نے
کوئی کون ھوتا ھے،
کہ
لوگوں کے ہاتھ ،ناک اور کان کاٹتا پھرے،
اللہ رب العزّت نے جنھیں آزاد پیدا کیاھے، وہ انکے سیاہ و سفید کے مالک بن جائیں ،نہ کسی کا خوف نہ ڈر ،
جیسے جنگل کا قانون ھو،
کوئی پوچھنے والا ھی نہیں،
وحشی کہیں کے
میں تو کہتا ھوں کہ ایسے شیطانی اور درندہ صفت لوگوں کو ضرور اور بالضرور
انصاف کے کٹہرے میں لانا چائیے اور جرم ثابت ھوجانے پر سرے عام ان کے بھی ایسے ھی ہاتھ ، ناک اور کان کاٹے جائیں جس طرح یہ اتنی بے رحمی اور بےدردی سے ان مجبور و بے سہارا لوگوں کو
جسمانی اعضاء سے محروم کر دیتے ھیں،
دنیا کہاں سے کہاں پہنچ گئی ھے اور ھم ابھی تک انسانی حقوق کی “الف ب” بھی نہ سیکھ سکے ،بس اب بہت ھو گیا ھے ایسے مظالم کو اب فی الفور بند ھو جانا چاھیئے،
اب وقت آگیا ھے کہ ایسے بے حسوں اور بے رحموں کو قرار واقعی سزا دی جائے تاکہ آیئندہ جس کسی کو اگر کسی معصوم ومجبور کے جسموں اورجذبات کے ساتھ کھیلنے کا شوق چرائے تو پہلے اپنےجسمانی اعضاء کی بھی خیر منا لے !!

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s