مسلمان اپنی حرکتوں کی وجہ سے اسلام کا مذاق اڑوا رہے ہیں .قاسم خان .

ہم غیر مسلموں کو کیوں موردِ الزام ٹھرائیں ہم خود بھی کچھ کم نہیں :—
ھمیں اب تک یہ ھی
نہ پتا چل سکا کہ !!
ھمارا رب ” اللہ “اصل میں ھے کہاں؟ کبھی ہم آئے دن یہ کہتے، سنتے، ھیں کہ مسجد مندر ڈھا دے ، پر کسی کا
دل نہ ڈھاویں،
کیونکہ
رب دلاں وچ وسدا..!
شاید بابا بھلے شاہ کا قول ھے
ایک دو دوستوں سے اس بارے پوچھا بھی کہ بھیئ آپ نے یہ جو کوٹ کیا ھے…
کسی کا دل نہ ڈھاویں سے کیا مراد ھے ،
مسجد مندر ڈھا دیویں کا کیا مطلب ھے… لیکن جواب کوئی تسلی بخش نہ پا کر سوچا کہ چلو آج اسی طرح کے کچھ پوائنٹس آئے روز سامنے آتے رھتے ھیں اور جو مجھے سمجھ آئے ھیں ڈسکس کر لیتے ھیں ،
اللہ ربُّ العزت کے بارے میں جو بات قرآن وحدیث کے مطالعے سے پتا چلتی ھے اور جو مجھے سمجھ آئی ھے ،
وہ یہ ھے کہ اللہ عرش پر ھے اور اس کا اختیار ،علم، حُکم اور ،طاقت ہر چیز پر حاوی ھے ، وہ آسمانوں اور زمین کا مالک ھے اور زرّہ زرّہ اس کی قدرت کے اختیار میں ھے،
اور وہ ھر چیز سے با خبر ھے،
اسے نہ اونگھ آتی ھے اور نہ نیند اور اس کا ھر جگہ موجود ھونے یعنی حاضر وناظر کا مطلب بھی یہی ھے کہ وہ دیکھ تھا ھے اس سے چیز اوجھل نہیں ھے وہ عرش سے ھر چیز کا احاطہ کئے ھوئے ھے،
اب اگر کوئی یہ کہتا ھے کہ اللہ ھمارے ساتھ ھے تو اس کا یہ مطلب ھوگا کہ وہ ھمیں دیکھ رہا ھے ،وہ ھماری مدد کرے گا اور ھماری مدد اس وقت یا کسی بھی وقت اس کی قدرت میں ھے،
اسیطرح ” رب دلاں اچ وسدا ” کا مطلب بھی شاید بابا بھلے شاہ کے نزدیک یہ ھو کہ وہ رب دلوں کے حال سے باخبر ھے، اس لئے اگر کسی کا دل دکھاؤ گے تو وہ رب کی ناراضگی کا سبب بنے گا ،یا اس کا یہ مطلب بھی ھو سکتا ھے کہ بہت سارے دلوں میں اللہ کا ذکر اور اللہ کی یاد رھتی ھے ،اللہ کے بندے ھر وقت اللہ کی حمدو تسبیح وغیرہ کرتے رھتے ھیں تو ایسے دلوں کو آپ توڑو گے.یعنی انکی دل آزاری کرو گئے تو یہ بات اللہ کی ناراضگی کا سبب بن جائے گی،
اب بات کرتے ھیں فیس بک پر ھمارے کچھ سیدھے سادے دوستوں کی جو آئے روز
ثوابِ دارین کے حصول کی خاطر اکثر غلط فہمیوں کا شکار ھو کر دھڑادھڑ شیئرنگ پہ شیئرنگ کرتے چلے جاتے ھیں.
کتنے سادہ لوح ھیں ھم ،
کتنے ناوقف ھیں ھم اپنے دین سے،qasim
کبھی ہم اللہ نبی کے مبارک ناموں کو جانورں کے جسم پر ڈھونڈتے ھیں، تو کبھی بادلوں سے لکھا ھوا فوٹو بنا کر غیر مسلموں پر یہ برتری ثابت کرنے کی کوشش کرتے ھیں کہ دیکھو اللہ کی شان ھے ، سبحان اللہ ،ماشاءاللہ ،کبھی درختوں کی شاخوں سے اللہ ،محمد لکھا ھوا ڈھونڈ لیتے ھیں ،اسیطرح درختوں کے تنے کاٹنے سے بھی اچانک یہی مقدس نام نکل آتے ھیں ،اور فیس بک پر تو اسی طرز کی شئرنگ سے جو ثواب کمایا جا رہا ھے اور جو اسلام کو پھیلانے کا سلسلہ بڑے زوروشور سے جاری ھے اس کے تو کیا ھی کہنے،
اور تو اور نہ شیئر کرنے والے کو پتا نہیں کن کن فتؤوں کا سامنا ھے ،
الخذر الخذر !!!
سوشل میڈیا پر اس طرح کی شئرنگ کی بھرمار ھے، کبھی روٹیوں کے اوپر ،تو کبھی جانور کے جسم پر یہ مقدس نام چھاپ کر ھم آئے دن اسلام کی حقانیت اور سچائی ثابت
کر نےکی کوشش کرتے ھیں، اس جہالت پر وہ لوگ بھی خوب ھنستے ھوں گے،
پچھلے دنوں اسی طرح کا ایک اور شوشہ بھی چھوڑا گیا تھا کہ دیکھو کس طرح یہودی عالم اسلام کے خلاف سرگرم ھیں ،ایک صاحب کہنے لگے یہ جو
کوکا کولا کا سٹیکر ھے بوتل پر چسپاں کیا ھوا، کو الٹا کر کے پڑھو یا کسی شیشے کے سامنے رکھ کر پڑھو تو اس کامطلب بنتا ھے ،
لا اللہ ،لا محمد ،
اسی لئے ہم اس کا بائیکاٹ کرتے ھیں کہ ھمارے مذھب اور مقدس ھستیوں کی توھین ھے ،لھذا ھمیں نہ خریدنا ھے نہ پینا ھے ،بائیکاٹ بائیکاٹ !!
الخذر الخذر!!
کیا لاجک ھے ،
کیا دلائل ھیں ھمارے پاس ،ھمارے اس شعور پر آفرین ،
حلانکہ ھمیں یہ ھی نہیں پتا کہ جس نے نہیں ماننا وہ تو ڈنکے کی چوٹ پر بھی کہتا ھے جاؤ میں نہیں مانتا، اس کو کیا ضروت پڑھی ھے کہ وہ چوری چھپے اس طرح کی حرکتیں کرتا پھرے، وہ تو سرے عام مذاق اُڑاتے پھرتے ھیں، وہ ھم مسلمانوں سے کیوں ڈریں گے ھماری طاقت ھی کتنی ھے ھر چیز میں تو ھم ان کی بنی ھوئ ٹیکنالوجی کے قدم قدم پر محتاج ھیں ،ھمیں اپنی اداؤں پہ غور کرنا چاھئے.
ھمیں اپنا محاسبہ کرنا چاھئے ،کہ آخر ھم نے کون سا تیر مارا رکھا ھے،
ہم نے اپنی جھوٹھی انا کی تسکین کے لئے اس مذھب کا جو حال کیا ھے ..
سب کے سامنے ھے ،
اس مذھب کا کیا کیا حشر ونشر ھم نے نہ کیا…
کبھی ہم جوتوں کے تلووں کے نیچے لکھے نام تلاش کر لیتے ھیں تو کبھی کہیں اور..
.. معاذاللہ
اور پھر اس ایشو پر کافی رونا دھونا چلتا رہتا ھے، کہ دیکھو کفّار نے ھمارے مذھب کی کتنی توھین کی ھے،
اِس کا بائیکاٹ ،
اُس کا بائیکاٹ،
ایک بات تو اب تک واضح ھو چکی ھے ،کہ ہم اس حد تک کمزور اور پست ھو چکے ھیں کہ خاکے بنانے والوں کا اب تک بال بھی باکا نہ کر سکے اور نہ ھی ان شعائر اسلام کا مذاق اُڑانے والوں کا کچھ بگاڑ سکے سوائے چند ایک جھوٹی جلی ھو ئی تصویریں اس ٹائیپ کے لوگوں کی ایڈیٹ کر کے لگا دیتے ھیں کہ دیکھو اس نے یہ توھین کی تو اس کا جسم جل کر کوئلہ ھو گیا یا سر گدھے یا کتے کا ھو گیا،اور ساتھ میں لکھا ھوتا ھے کہ اللہ کے دشمن کو کیسے عزاب نے گھیر لیا اور دنیا کے لئے نشان عبرت بن گیا،
دل کے بہلانے کو
خیال اچھا ھے غالب !
ہم نے اسلام کے نام پر،
توھینِ رسالت ،
توھینِ قرآن،
وغیرہ کے الزامات عائد کر کے کتنے بے گناؤں کو اس ظلم کی بھینٹ چڑھایا ،
اپنی زاتی رنجشوں اور چپقلشوں کا بدلہ،
توھین رسالت
اور توھین مذھب
کی آڑ میں نکلوایا ،
اور نکلوا رھے ھیں،
ہم نے ان مقدس ناموں کے نقش پا بنا کر اپنے گھروں میں لٹکا رکھے ھیں اور تو اورنقش پا کے اوپر اللہ اور نبی کے بابرکت نام تک لکھوا رکھے ھیں،اس قرآن کو جو
وے آف لائف ھے… کو تبرک کے طور پر گھروں اور تاقوں میں رکھا ہوا ھے یا گلے میں تعویذ بنا کر لٹکا رکھا ھے ،ھمیں یہودونصاریٰ کی سازشوں، نے کیا کہنا ھے ،ھم خود ھی بہت ھیں،
بقول ثاقب مللک
” ھماری نیّتیں ٹھیک نہیں ھیں
بقول ثاقب مللک
” ھماری نیّتیں ٹھیک نہیں ھیں ھم اس اسلام کو اپنے آپ پر ھی نافذ کرنے سے خوف زدہ ھیں ”
بس اب یہ سب
شازش شازش !!
بائیکاٹ بائیکاٹ !!
بند ھونا چاھیئے
ھمیں اپنے آپ سے مخلص ھونا ھو گا،
اپنے سچے دین سے مخلص ھونا ھوگا ،
اپنی زندگیوں کے اوپر اسے لاگو کرنے ھو گا ،ھمیں اس فریب سے نکلنا ھو گا،تعلیم حاصل کرنی ھو گی
ھمیں اپنے آپ کو اور اپنے اولاد کو صحیح اسلام کی روح سے روشناس کرانا ھو گا ھمیں ان خرافات سے نکلنا ھو گا جن کا ھمارے اس دین سے دور کا بھی واسطہ نہیں ھمیں اپنے بچوں کو اصل اسلام کا درس دینا ھوگا پھر کسی دشمن کو شازشیں کرنے کی ضرورت بھی باقی نہیں رھے گی.

 

Advertisements

2 thoughts on “مسلمان اپنی حرکتوں کی وجہ سے اسلام کا مذاق اڑوا رہے ہیں .قاسم خان .

  1. اسلام علیکم ، اس موضوع پر اچھا لکھا ھے۔ واقعی مجموعی طور پر ہم لوگ علم(دینی اور دنیاوی) عمل اور محنت کے مشکل راستے کو چھوڑ کر ایسے جھوٹے موٹے کام کر کے سمجھتے ہیں کہ ہم نے اسلام کی کوئی بڑی خدمت کر دی ۔

    Liked by 1 person

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s